مرکزي کالم

شیخ مقصود الحسن فيضي

رمضان المبارک

المقال

  ...  

خدمت خلق اور اعتکاف/ درس نمبر : 17
1391 زائر
10/09/2009
غير معروف
شیخ ابو کلیم فیضی

بسم اللہ الرحمن الرحیم

دروس رمضان:17

اخلاقیات :02

خلاصہء درس : شیخ ابوکلیم فیضی الغاط

بتاریخ : 19 رمضان المبارک 1430ھ، م 09ستمبر 2009

خدمت خلق اور اعتکاف

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ قیامت کے روز اللہ تعالی فرمائے گا : اے آدم کے بیٹے ! میں بیمار ہوا تو تو نے میری عیادت نہیں کی ، انسان کہے گا : اے میرے رب ! میں کیسے تیری عیادت کرتا جب کہ تو خود ہی سارے جہاں کا پالنہار ہے ؟ اللہ تعالی فرمائے گا : کیا تجھے یہ معلوم نہیں تھا کہ میرا فلاں بندہ بیمار ہوا لیکن تم اس کی عیادت کو نہیں گئے ، کیا تمہیں یہ علم نہیں تھا کہ اگر تم اس کی عیادت کرتے تو مجھے اس کے پاس پاتے ، اے آدم کے بیٹے ! میں نے تجھ سے کھانا مانگا تھا لیکن تم نے مجھے کھانا نہیں کھلایا ، وہ بندہ کہے گا : اے میرے رب میں تجھے کیسے کھانا کھلاتا جب کہ تو خود ہی تمام دنیا کا پالنہار ہے ؟ اللہ تعالی فرمائے گا : کیا تمہیں معلوم نہیں تھا کہ میرے فلاں بندے نے تم سے کھانا مانگا ، اگر تم نے اسے کھانا کھلایا ہوتا تو اس کا اجر وثواب میرے پاس پاتے ، اے آدم کے بیٹے ! میں نے تجھ سے پانی طلب کیا تھا تم نے مجھے پانی نہیں پلایا ؟ وہ کہے گا : اے میرے رب ! میں تجھے کیسے پانی پلاتا تو تو خود رب العالمین ہے ؟ اللہ تعالی فرمائے گا : تجھ سے میرے فلاں بندے نے پانی مانگا تھا مگر تم نے اسے پانی نہیں پلایا ،کیا تمہیں علم نہیں تھا کہ اگر تم اس کو پانی پلادیتے تو اس کے اجر وثواب کو میرے پاس پاتے ۔

{ صحیح مسلم : 2669 ، البر والصلۃ }

ساری مخلوق اللہ تعالی کی کنبہ کی حیثیت رکھتی ہے ، لہذا وہ شخص جو اللہ تعالی کی مخلوق کے لئے عموما اور اس کے مومن اور نیک بندوں کے لئے خصوصا زیادہ نفع بخش ہو وہ اللہ تعالی کو بہت ہی محبوب ہے ،زیر بحث حدیث میں جو خدمت خلق کے بارے میں سب سے عظیم حدیث ہے ، اس نقطے کو واضح کیاگیا ہے یعنی اللہ تعالی کی ضرورت مند مخلوق کی خدمت کرنا ، ان کے حاجات کے لئے تگ ودو کرنا اور انہیں کھلانا پلانا اوراللہ تعالی کو بہت محبوب ہے ، چنانچہ اللہ تعالی ایک ایسے شخص سے پوچھے گا جس نے کسی مومن و صالح بندے کی عیادت کے بارے میں کوتاہی اور لاپرواہی سے کام لیا ہوگا کہ تو نے میری عیادت کیوں نہ کی گویا کسی مومن وصالح بندے کی عیادت کرنا اللہ تبارک وتعالی تک پہنچنے اور اس کی رضا حاصل کرنے کا بہت بڑا ذریعہ ہے ، اسی پر کسی بھوکے پیاسے محتاج شخص کو کھلانے پلانے کوبھی قیاس کیا جاسکتا ہے۔

زیربحث حدیث میں یہ تین کام بطور مثال کے بیان ہوئے ہیں ورنہ ہر وہ کام جس سے خلق خدا مستفید ہورہی ہے ، اس کی پریشان حالی دور ہورہی ہو اور اس کی مصیبت ختم ہورہی ہو ، یہی اجر وثواب ہے ، چنانچہ ایک صحابی خدمت نبوی میں حاضر ہوکر سوال کرتے ہیں کہ یا رسول اللہ!

اللہ تعالی کے نزدیک سب سے محبوب شخص کون ہے اور اللہ تعالی کے نزدیک سب سے محبوب عمل کون کون سے ہیں ؟ اس کے جواب میں آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا : اللہ تعالی کے نزدیک سب سے زیادہ محبوب وہ شخص ہے جو لوگوں کے لئے سب سے زیادہ نفع بخش ہو ، اور اللہ تعالی کے نزدیک سب سے زیادہ محبوب یہ ہے کہ کسی مسلمان کے دل میں خوشی کی لہر دوڑا دے ، یا اس سے کسی پریشانی کو دور کردے ، یا اس کی طرف سے قرض ادا کردے ، یا اس کی بھوک ختم کردے ، نیز آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا :

میں کسی مسلمان بھائی کی ضرورت پوری کرنے کے لئے اس کے ساتھ چلوں مسجد نبوی میں ایک مہینہ اعتکاف بیٹھنے سے بہتر ہے ، اور جو شخص اپنے غصے کو پی جائے جسے نافذ کرنے پر وہ قادر ہو تو اللہ تعالی قیامت کے دن اس کے دل کو امیدوں سے بھر دے گا { یعنی وہ میدان حشر میں رحمت و مغفرت الہی سے نا امید نہ ہوگا } اور جو شخص کسی مسلمان بھائی کی کسی حاجت کو پورا کرنے کے لئے اس کے ساتھ چل کر جاتا ہے تو جس دن بہت سے لوگوں کے قدم [ پل صراط پر سے ] پھسل جائیں گے اللہ تعالی اس کے قدم کو ثابت رکھے گا اور بدخلقی [ نیک ] عمل کو اسی طرح برباد کردیتی ہے جس طرح کہ سرکہ شہد کو برباد کردیتا ہے ۔

{ الطبرانی الکبیر - الصحیحہ : 906 }

ان دونوں مبارک حدیثوں کو ایک بار پھر پڑھیں ، غور کریں اور دیکھیں کہ ان حدیثوں میں مذکورہ اعمال سے متعلق ہمارا کردار کیسا ہے ؟ اگر کچھ لوگ یہ کام کررہے ہیں تو انہیں اپنا محاسبہ کرنا چاہے کہ وہ لوگ یہ کام بطور عادت کے کررہے ہیں یا ثواب و اجر اور خدمت خلق کی نیت سے ، اگر احتساب اور للہیت کا جذبہ کام کررہا ہے تو انہیں خوشخبری ہے کہ وہ لوگ اللہ تعالی کے محبوب لوگ ہے ۔ ۔۔۔ واللہ اعلم ۔

لیلۃ القدر کی دعا:

"اللَّهُمَّ إِنَّكَ عَفُوٌّ تُحِبُّ الْعَفْوَ فَاعْفُ عَنِّي

{اے اللہ بے شک تو معاف کرنے والا ہے، معافی کو پسند فرماتا ہے، پس مجھے معاف کردے}۔ {ترمذی}۔

ALlahuMma ;Nnk AF>wn tuihBbul AF>v f>A>fu ANnI

ختم شدہ

   طباعة 
0 صوت
...
...

...

روابط ذات صلة

  ...  

المقال السابق
المقالات المتشابهة المقال التالي
...
...

...

مكتب توعية الجاليات الغاط ?